: سقراط (Socrates):

سقراط فکر و فلسفے کی تاریخ کے باب اول کے منصب پر فائز ہے۔ اس عظیم شخصیت نے اپنی گفتگو اور مکالمے کے ذریعے فہم و ادراک کے دفتر کے دفتر کھولے مگر کا غذ پر ایک حرف تک نہیں لکھا۔ سقراط کے افکار و خیالات اس کے شاگرد افلاطون کے ذریعے دنیا تک پہنچے۔ […]

Read More

: اگلی آگ کب لگتی ہے — تحریر روف کلاسرا:

دس برس بعد وہیں جا کھڑے ہوئے ہیں جہاں سے یہ سفر شروع کیا تھا۔ اگرچہ بہت سارے لوگ کہیں گے کہ وہیں جا کھڑے ہوئے جہاں 1958ء میں تھے۔ دس برس قبل نواز شریف آکسفورڈ سٹریٹ لندن میں لگائے گئے دربار کی صدارت کرتے ہوئے جو گفتگو کرتے تھے وہ آج سے الٹ ہے۔ […]

Read More

: احساس :

وہ ناشتہ کر رھی تھی. مگر اس کی نظر امی پر جمی ھوئی تھی. ادھر امی ذرا سی غافل ھوئی. ادھر اس نے ایک روٹی لپٹ کر اپنی پتلون کی جیب میں ڈال لی. وہ سمجھتی تھی کہ امی کو خبر نہیں ھوئی. مگر وہ یہ بات نہیں جانتی تھی کہ ماؤں کو ہر بات […]

Read More

: عادات سے شخصیت :

پرانے وقتوں كى بات ہے كہ ايک بادشاه كے دربار ميں ايک اجنبى حاضر ہوا اور بادشاه سے نوكرى كا طلبگار ہوا – بادشاه نے جب اسكى قابليت دريافت كى تو اس نے بتايا كہ وه سياسى (عربى مين سياسى كا مطلب ہوتا ہےکہ افہام و تفہيم سى مسئلہ كا حل نكالنے والا اور معاملہ […]

Read More

: اپنے اصلی گھر کا انتظام :

ایک صاحب کو انگور بہت پسند تھے… صبح اپنی فیکٹری جاتے ہوئے انہیں راستے میں اچھے انگور نظر آئے…انہوں نے گاڑی روکی اور دوکلو انگور خرید کر نوکر کے ہاتھ گھر بھجوا دئیے اور خود اپنی تجارت پر چلے گئے… دوپہر کو کھانے کے لئے واپس گھر آئے…دستر خوان پر سب کچھ موجود تھا مگر […]

Read More

: *الحمد اللہ* :

اوناسس ایک یونانی تاجر تھا. دنیا کی سب سے بڑی جہاز رانی کمپنی کا مالک تھا. زیتون کا کاروبار کرتا تھا.. اسے دنیا کے امیر ترین شخص کا اعزاز حاصل تھا. اسکو ایک عجیب بیماری لگی تھی جس وجہ سے اسکے اعصاب جواب دے گۓ تھے… یہاں تک کہ آنکھوں کی پلکیں بھی خود نہیں […]

Read More

: ولی کی موت :

ﺍﯾﮏ ﺑﺎﺩﺷﺎﮦ ﮐﯽ ﻋﺎﺩﺕ ﺗﮭﯽ ﮐﮧ ﻭﮦ ﺑﮭﯿﺲ ﺑﺪﻝ ﮐﺮ شہر میں اپنی رعایا کا حال دیکھنے نکل جایا کرتا تھا۔ ﺍیک ﺩﻥ ﺍﭘﻨﮯ ﻭﺯﯾﺮ ﮐﯿﺴﺎﺗﮫ ﮔُﺰرتے ﺷﮩﺮ ﮐﮯ ﺍﯾﮏ ﮐﻨﺎﺭﮮ ﭘﺮ ﭘﮩﻨﭼﺎ ﺗﻮ ﺩﯾﮑﮭﺎ ﺍﯾﮏ ﺁﺩﻣﯽ ﮔﺮﺍ ﭘﮍﺍ ﮨﮯ۔ ﺑﺎﺩﺷﺎﮦ ﻧﮯ ﺍِﺳﮯ ﮨﻼ ﮐﺮ ﺩﯾﮑﮭﺎ ﺗﻮ ﻭﮦ ﻣﺮ ﭼُﮑﺎ ﺗﮭﺎ۔ ﻟﻮﮒ اُس آدمی ﮐﮯ […]

Read More

: ہنگامہ ہے کیوں برپا۔ : تحریر :روف کلاسرا :

دن رات ہم سنتے ہیں کہ ووٹر پڑھا لکھا ہو تو پاکستان کی تقدیر بدل جائے گی۔ کیا لاہور میں کم پڑھے لکھے لوگ رہتے ہیں؟ انہیں مزید پڑھانے کی ضرورت ہے؟ اس پڑھے لکھےووٹر کی تلاش کی بحث میں مجھے ڈیرہ غازی خان کے سردار فاروق لغاری یاد آئے۔ انیس سو اسی کی دہائی […]

Read More

: ایک پرہیز گار جوان۔۔۔ :

حضرت یحییٰ بن ایوب خزاعی سے مروی ہے کہ حضرت عمر رضی اللہ عنہ کے زمانہ میں ایک پرہیز گار جوان تھا، وہ مسجد میں گوشہ نشین رہتا تھا اور اللہ تعالیٰ کی عبادت میں مصروف رہتا تھا۔ حضرت عمر رضی اللہ عنہ کو وہ شخص بہت پسند تھا۔ اس جوان کا بوڑھا باپ زندہ […]

Read More

: پڑھانے والے کا مقام۔۔۔ :

مس عائشہ ﺍﯾﮏ ﭼﮭﻮﭨﮯ ﺳﮯ ﺷﮩﺮ ﻣﯿﮟ ﭘﺮﺍﺋﻤﺮﯼ ﺍﺳﮑﻮﻝ ﮐﻼﺱ 5 ﮐﯽ ﭨﯿﭽﺮ ﺗﮭﯿﮟ۔ ﺍﻥ ﮐﯽ ﺍﯾﮏ ﻋﺎﺩﺕ ﺗﮭﯽ ﮐﮧ ﻭﮦ ﮐﻼﺱ ﺷﺮﻭﻉ ﮐﺮﻧﮯ ﺳﮯ ﭘﮩﻠﮯ ﮨﻤﯿﺸﮧ ” ﺁﺋﯽ ﻟﻮ ﯾﻮ ﺁﻝ ” ﺑﻮﻻ ﮐﺮﺗﯿﮟ۔ ﻣﮕﺮ ﻭﮦ ﺟﺎﻧﺘﯽ ﺗﮭﯿﮟ ﮐﮧ ﻭﮦ ﺳﭻ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﮩﺘﯿﮟ۔ ﻭﮦ ﮐﻼﺱ ﮐﮯ ﺗﻤﺎﻡ ﺑﭽﻮﮞ ﺳﮯ ﯾﮑﺴﺎﮞ ﭘﯿﺎﺭ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﯽ ﺗﮭﯿﮟ۔ […]

Read More

: ظلم سے تباہ ہوتی ہیں :

سیدنا علیؓ نے فرمایا ہے کہ قومیں کفر سے تباہ نہیں ہوتیں، ظلم سے تباہ ہوتی ہیں۔ مجھے ہمیشہ اس بات پر انتہائی حیرانگی ہوتی تھی کہ اہل بغداد کس زوال کا شکار ہونگے، کیا ظلم ہوگا وہاں پر، کیا بے حیائی ہوگی، کیا بے غیرتی ہوگی کہ بالآخر اللہ تعالیٰ نے اپنے غضب کا […]

Read More

: حضرت اویس قرنی :

حضرت اویس قرنی کو جنت کے دروازے پر کیوں روک لیاجائے گا۔ حضوراکرم (صلی ﷲ علیہ وسلم) نے فرمایا کہ جب لوگ جنت میں جارہے ہوں تو اویس قرنی کو جنت کے دروازے پرروک لیاجائے گا۔ حضرت اویس قرنی کون ہیں ۔ اویس نام ہے عامرکے بیٹے ہیں مرادقبلہ ہے قرن انکی شاخ ہے اوریمن […]

Read More

: دل دھلادنے والا واقعہ۔ :

بیگم افطاری کے انتظام میں کوئی کمی بیشی نہیں رہنی چاہیے، میں نے آموں کی پیٹی بمشکل نیچے رکھ کر پھولے سانس سے صوفے کی طرف لپکتے ہوئے فاطمہ سے کہا، میرے خدایا اور کتنی بار کہیں گے پہلے کبھی کوئی کمی بیشی رہی ہے جو اتنی تائید کررہے ہیں،پچھلی بار بھی ایسی مزے کی […]

Read More

: ﺩﻋﺎ ﮐﺮﻧﮯ ﺟﺎ ﺭﮨﮯ ﮨﻮ ﯾﺎ ﻣﻼﻗﺎﺕ ﮐﺮﻧﮯ؟ :

ﺍﺱ ﮐﯽ ﺷﺎﺩﯼ ﮨﻮﮮ ﺩﺱ ﭘﻨﺪﺭﮦ ﺩﻥ ﮔﺰﺭ ﭼﮑﮯ ﺗﮭﮯ ﻟﯿﮑﻦ ﻣﯿﮟ ﺍﺏ ﺑﮭﯽ ﺣﻘﯿﻘﺖ ﺳﮯ ﺳﻤﺠﮭﻮﺗﮧ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮ ﭘﺎﯾﺎ ﺗﮭﺎ . ﺍﻭﺭ ﺣﻘﯿﻘﺖ ﯾﮧ ﺗﮭﯽ ﮐﮯ ﮨﻤﺎﺭﯼ ﻣﺤﺒّﺖ ﺍﻭﺭ ﻭﮦ ﺑﮯﻧﺎﻡ ﺳﺎ ﺭﺷﺘﮧ ﺟﺲ ﻧﮯ ﮨﻤﯿﮟ ﺗﯿﻦ ﺳﺎﻝ ﺗﮏ ﺟﻮﮌﮮ ﺭﮐﮭﺎ ﺗﮭﺎ، ﮐﺐ ﮐﺎ ﺧﺘﻢ ﮨﻮ ﭼﮑﺎ ﺗﮭﺎ . ﻭﮦ ﮐﺴﯽ ﺍﻭﺭ ﮐﯽ ﮨﻮ […]

Read More

: گارا بنانے والا مزدور :

ایک نیک شخص کے گھر کی دیوار اچانک گرگئی ۔ اسے بڑی پریشانی لاحق ہوئی اور وہ اسے دوبارہ بنوانے کے لئے کسی مزدور کی تلاش میں گھر سے نکلا اور چوراہے پر جا پہنچا ۔ وہاں اس نے مختلف مزدوروں کو دیکھا جو کام کے انتظار میں بیٹھے تھے ۔ان میں ایک نوجوان بھی […]

Read More